Search This Blog

Wednesday, 6 August 2014

Sayed Qaiser Abbas shared Al-Hujjetlibrary's photo

" اسرائیل کے خلاف نعرے لگانا حرام ہے۔۔یہ ھے سلفی وھابی اسلام۔"
سعودی عرب کے ایک درباری وہابی مفتی نے اسرائیل کے خلاف نعرے لگانے کو حرام قرار دے دیا ہے۔
لندن سے شائع ہونے والے اخبار راي الیوم کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے مفتی صالح الفوزان نے صہیونی حکومت کے حق میں ریاض کی پالیسی کی بے چون وچرا پیروی کرتے ہوئے اپنے اشتعال انگیز بیان میں دعوی کیا ہے کہ اسرائیل کے خلاف نعرے لگانا حرام ہے۔
اسرائيل کی جانب سے غزہ میں فلسطینیوں کے قتل عام اور وحشیانہ اقدامات کے ساتھ ہی دنیا بھر میں صہیونی حکومت کے خلاف غم غصے اور نفرت میں اضافہ ہوگيا ہے اور سعودی عرب کے اس مفتی کے اشتعال انگيز بیان نے سوشیل میڈیا اور ٹی وی چینلوں پر ایک نئی متنازعہ بحث چھیڑ دی ہے۔
صالح الفوزان نے کہ جو سعودی عرب میں امر بہ معروف و نہی از منکر سے موسوم انتھا پسند گروہ کا رکن بھی ہے، یہ بیان اپنی ایک آڈیو کیسٹ میں دیا ہے۔ واضح رہے کہ چند دنوں قبل سعودی عرب کے مفتی اعظم اور اس ملک کی علماء کونسل کے سربراہ عبدالعزیز بن عبد اللہ آل شیخ نے بھی اپنے خیال باطل میں فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے نکالی جانے والی ریلیوں کو ہنگامہ آرائی سے تعبیر کرتے ہوئے ان میں شرکت کو حرام قرار دیا تھا۔ ادھر سعودی عرب کی عدلیہ کی اعلی کونسل کے سربراہ صالح الحیدان نے بھی گذشتہ ہفتے، غزہ کے عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کی اپنے خیال باطل میں شدید الفاظ میں نفی کی تھی۔